اتوار , 20 جنوری 2019

چین میں بچوں کے یونیفارم پر سینسر لگا کر ٹریکنگ کا آغاز

بیجنگ: چین میں بچوں کے یونیفارم میں ٹریکنگ سسٹم لگے گا

چین میں اب اسکول کے طلبا و طالبات کے یونیفارم کو بھی اسمارٹ کردیا گیا ہے کیونکہ ان پر لگی خاص مائیکرو چپ کے ذریعے اسکول کے باہر بھی ان کی آمدورفت پر نظر رکھی جاسکے گی۔

چینی صوبے ’گوائی زُو‘ کے 11 اسکولوں کے بچوں کے یونیفارم پر مائیکروچِپ لگائی گئی ہے جو گلوبل پوزیشننگ سسٹم ( جی پی ایس) کے ذریعے بچوں کا جائزہ لیتی رہتی ہے خواہ وہ اسکول کے میدان سے باہر ہی کیوں نہ نکل چکے ہیں۔

بچوں کے لباس کے کندھوں پر دائیں اور بائیں دو چپس لگائی گئی ہیں جن کے ذریعے اسکول انتظامیہ اور والدین دونوں ہی بچوں کی ٹریکنگ کرسکتے ہیں اگر بچہ کمرہ جماعت سے باہر جائے یا اسکول کے احاطے سے نکل جائے تو اس کی فوری اطلاع والدین اور اسکول انتظامیہ کو ہوجاتی ہے

یہ سسٹم اسکول میں بچے کے سونے کی خبر بھی انتظامیہ کو پہنچا دیتا ہے اور اسی پر بس نہیں بلکہ اس میں ایک موبائل ایپ کے ذریعے پیسے خرچ کرنے اور ان کی حد قائم کرنے کا بھی انتظام ہے۔

اسے بنانے والی کمپنی کا مؤقف ہے کہ جدید ٹیکنالوجی سے مرصع یونیفارم حفاظتی اقدامات کے تحت بنایا گیا ہے اور اسکول میں بچوں کو منظم رکھنے کا بھی کام کرتا ہے تاہم سوشل میڈیا پر بعض حلقوں نے اس پر تنقید بھی کی ہے۔

لوگوں نے کہا ہے کہ بچوں کے انسانی حقوق ہوتے ہیں اور وہ تخلیہ چاہتے ہیں جبکہ ایک شخص نے کمپنی سے سوال کیا کہ اگر آپ بچے ہوتے اور 24 گھنٹے آپ پر نظر رکھی جاتی تو آپ کو کیسا لگتا؟

وجہ کوئی بھی ہو چین کے اسکولوں میں اے آئی نظام کے ذریعے حاضری اور چہرہ شناخت کرنے والے سسٹم پر بھی کام جاری ہے۔ قبل ازیں خبریں آئی تھیں کہ چین کے بعض اسکولوں کے کمرہ جماعت میں طالب علموں پر نظر رکھنے والے کیمرے بھی لگائے گئے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے