ہفتہ , 21 ستمبر 2019

بھارت جان بوجھ کر انگلینڈ سے ہارا ، ورلڈ 2019کا بڑا اپ سیٹ ہو گیا

انگلینڈ کے خلاف میچ میں ہدف کے تعاقب میں وکٹیں باقی ہونے کے باوجود حیران کن طور پر محتاط انداز میں بیٹنگ پر سابق بھارتی کپتان مہندرا سنگھ دھونی کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔اتوار کو برمنگھم میں کھیلے گئے میچ میں انگلینڈ نے بھارت کو فتح کے لیے 338رنز کا ہدف دیا تھا لیکن ہدف کے تعاقب میں بھارتی ٹیم 306 رنز ہی بنا سکی۔ جب مہندرا سنگھ دھونی بیٹنگ کے لیے میدان میں آئے تو بھارت کو میچ میں فتح کے لیے 65 گیندوں پر تقریباً 10 کی اوسط سے 112رنز درکار تھے اور بھارت کی 6 وکٹیں باقی تھیں۔
اس موقع پر ہاردک پانڈیا نے تیزی سے رنز سکور کیے لیکن مہندرا سنگھ دھونی نے بڑھتے رن ریٹ کے باوجود جارحانہ انداز نہ اپنا جس کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ انہوں نے اپنی اننگز کی ابتدائی 24 گیندوں پر صرف 29 رنز بنائے تھے، پانڈیا کے آؤٹ ہونے کے بعد بھی ہدف کا تعاقب زیادہ مشکل نہ تھا اور بھارتی ٹیم کو 31 گیندوں پر 71 رنز درکار تھے لیکن دھونی اور ان کے نئے ساتھی کیدار جادھو نے کسی بھی موقع پر ہدف حاصل کرنے کی کوشش نہ کی جس کے سبب بھارت کو میچ میں 31 رنز سے ناکامی کا منہ دیکھنا پڑا۔ دھونی کو اسطرح کی بیٹنگ پر انہیں سابق کھلاڑیوں کے ساتھ ساتھ بھارتی شائقین کرکٹ نے بھی شدید تنقید کا نشانہ بنایا گیا۔37سالہ دھونی اب تک اپنے ون ڈے کیریئر میں49مرتبہ ہدف کے تعاقب کے دوران ناٹ آؤٹ رہے اور بھارتی کو47میچز میں کامیابی دلائی تاہم انگلینڈ کے خلاف پہلی مرتبہ دھونی کے کریز پر ہونے کے باوجود بھارتی ٹیم کو ناکامی کا منہ دیکھنا پڑا جس کے بعد یہ سوال شدت سے سر اٹھا رہا ہے کہ کیا سابق بھارتی کپتان نے پاکستان کے ورلڈ کپ سیمی فائنل تک جانے کے چانسز کو نقصان پہنچانے کے لیے جان بوجھ کر سلو بیٹن

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے