ہفتہ , 21 ستمبر 2019

لاہور ہائیکورٹ نے نواز شریف کے ذاتی معالج کو ملاقات اور چیک اپ کی اجازت دے دی

لاہور ہائیکورٹ نے نواز شریف کے ذاتی معالج ڈاکٹر عدنان کو ملاقات اور چیک اپ کی اجازت دے دی۔ عدالت نے کہا نواز شریف کے معالج چیک اپ کے بعد میڈیا پر کوئی بیان جاری نہیں کریں گے۔قائم قام چیف جسٹس مامون الرشید نے مریم نواز کی درخواست پر سماعت کی۔
وکیل پنجاب حکومت نے کہا نواز شریف کو جیل میں تمام سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں، ڈاکٹر عدنان نواز شریف کی طبیعت سے متعلق افواہیں پھیلاتے ہیں۔ عدالت نے کہا ڈاکٹر عدنان جیل ڈاکٹرز کی موجودگی میں نواز شریف کا چیک اپ کر سکیں گے، اگر ڈاکٹر عدنان کوالیفائیڈ ہیں تو انکو علاج کیلئے جیل بھیجنے میں کیا مسئلہ ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے