منگل , 22 اکتوبر 2019

شاہ زیب خانزدہ بھی میدان میں آگئے سکولوں میں حجاب کی مخالفت میں .

خیبر پختونخوا کے سکولوں میں حجاب کو بچیوں کے یونیفارم کا حصہ بنائے جانے کافیصلہ شدید دبائو اور مخالفت کی وجہ سے واپس لے لیا گیا ہے۔اس مخالفت میں جہاں سول سوسائٹی کےاراکین پیش پیش تھے وہیں پرمیڈیا سے جڑی کئی اہم شخصیات نے بھی بڑھ چڑھ کر اس فیصلے کی مخالفت کی ۔ حجاب کو سکولوں کا یونیفارم بنائے جانے کے فیصلے کی مخالفت کو کامیاب بنانے کےلئے ان عناصر نے جہاں دلیلوں کا سہارا لیا وہیں پر طنز اور مذاق کو بھی ایک ہتھیار کے طور پر استعمال کیا
؎۔ سوشل میڈیا پر معروف ملکی صحافی اور اینکر شاہ زیب خانزادہ کی ایک ٹویٹ بھی گردش کرتی ہوئی دکھائی دے رہی ہے۔جس میں وہ کہتے ہیں کہ خیبر پختونخوا میں لڑکیوں سے جنسی ہراسانی کے 1177جبکہ لڑکوں سے جنسی ہراسانی کے 1150واقعات پیش آئے۔ لڑکے خود کو کس چیز سے ڈھانپیں۔ واضح رہے کہ کے پی کے حکومت نے سکولوں میں حجاب کو یونیفارم کا حصہ بنانے کا فیصلہ کیا تھا تاہم بہت جلد اس فیصلے کو واپس لینا پڑ گیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے