منگل , 22 اکتوبر 2019

عدنان سمیع خان کےلئے نفرت آمیز لفظ استعمال کیا بھارتی اخبار دی ہندو نے جرمانہ سنائے جانے پر

پاکستانی نژاد بھارتی گلوکار عدنان سمیع خان پر حال ہی میں ایک مشکل گزری ہے جب انھیں ممبئی کے ایک ایپلٹ ٹریبونل نے 2003میں آٹھ فلیٹوں کی خلاف قانون خریداری کے جرم میں پچاس لاکھ روپے جرمانے کی سزا سنائی ہے۔ ٹریبونل کا فیصلہ آتے ہی بھارتی اخبار دی ہندو نے اپنی شہ سرخی میں عدنان سمیع خان کے جرمانہ پانے کےلئے لفظ سلیپڈ استعمال کیا جس کے معانی تھپڑکھانا ہیں۔ عام طور پر جرمانہ پایا کےلئے لفظ فائنڈ استعمال کیا جاتا ہے۔ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر پاکستانی اس خبر کو شئیر کرتے ہوئے خوب محظوظ ہوئے ،ایک صارف نے دی ہندو کی ہیڈ لائن کا یہ لفظ شئیر کرتے ہوئے لکھا،
مجھے یہ لفظ بے حد پسند آیا ہے۔ کئی دیگر صارفین نےایک بارپھر عدنان سمیع خان کو لتاڑتے ہوئے کہا، میجر عدنان سمیع خان کو پاکستان کےلئے خفیہ خدمات سر انجام دینے کی بھاری قیمت چکانی پڑی ۔ ایک صار ف نے تویہاں تک کہہ دیا۔ میجر تم اپنا مشن جاری رکھو، تمھارا جرمانہ حکومت پاکستان ادا کرے گی۔ ایپلٹ ٹریبونل نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ عدنان سمیع خان نے 2003میں ممبئی کے علاقے لوکھنڈوالا کی اوبرائے سکائی گارڈن سوسائٹی میں اس وقت دو کروڑ 53لاکھ روپے میں خریدے جب وہ پاکستانی شہری تھے۔ عدنان سمیع خان کو بھارتی شہریت 2016میں ملی۔ ایک غیر ملکی ہونے کی حیثیت سے وہ بھارت میں پراپرٹی کی خریداری کے مجاز نہیں تھے ۔ ایپلٹ ٹریبونل نے 2010میں ان پر 20لاکھ روپے جرمانہ عائد کیا فیصلے کے خلاف عدنان سمیع خان نے اپیل کی جس کے بعد ٹریبونل نے کیس کی دوبارہ سماعت کرنے کے بعد جرمانہ 20لاکھ روپے سے بڑھا کر 50لاکھ روپے کردیا۔ عدنان سمیع خان اب تک دس لاکھ روپے ادا کرچکے ہیں جبکہ باقی کی رقم انھیں تین ماہ کے اندر اندر ادا کرنا ہو گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے