منگل , 22 اکتوبر 2019

چندی گڑھ، بھارتی ریاست پنجاب میں ہنی ٹریپ بلیک میلنگ کا معاملہ سامنے آنے پر 3 خواتین کو گرفتار کرلیا گیا ہے جبکہ چوتھی خاتون فرار ہوگئی ہے۔

ریاست پنجاب کے ضلع پٹیالہ میں 30ستمبر کی رات کو بلدیو سنگھ نامی نوجوان اپنی گاڑی میں گزر رہا تھاکہ اسی دوران اس سے ایک خاتون نے لفٹ مانگی۔ بلدیو سنگھ نے خاتون کو اس کے گھر چھوڑا تو اس نے چائے کے بہانے اسے گھر کے اندر بلالیا جہاں اس کا تعارف اپنی بیٹی کے ساتھ کروایا۔

کچھ روز گزرنے کے بعد خاتون نے دوبارہ بلدیو سنگھ کو اپنے گھر بلایا جہاں اس کی بیٹی نے بہلا پھسلا کر اس کے ساتھ جسمانی تعلق قائم کرلیا۔ اسی دوران ان کی پڑوسن نے دونوں کے انتہائی لمحات کی ویڈیو بنائی جس کے بعد تینوں خواتین نے مل کر بلدیو سنگھ کو بلیک میل کرنا شروع کردیا۔خواتین نے متاثرہ شخص سے اس کا موبائل فون ، شناختی کارڈ اور ایک ہزار روپے نقدی چھین لی اور مزید 50 ہزار روپے کا تقاضہ کرنے لگے۔

ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے خوف سے بلدیو سنگھ نے معاملہ 25 ہزار روپے میں سلجھالیا لیکن پیسے لینے کے باوجود خواتین نے اس کا موبائل فون اور شناختی کارڈ واپس نہیں کیااور اس سے مزید پیسوں کا تقاضہ کرنے لگیں۔بلیک میلنگ سے تنگ آیا متاثرہ شخص پولیس کے پاس پہنچ گیا اور خواتین کی شکایت درج کرائی جس پر پولیس نے اسے 10 ہزار روپے دے کر بلیک میلر گروہ کے پاس بھیجا ۔ بعد ازاں جب خواتین نے پیسے وصول کرلیے تو پولیس نے چھاپہ مار کر تینوں کو گرفتار کرلیا۔ ملزم خواتین سے متاثرہ شخص کا شناختی کارڈ اور موبائل فون بھی برآمد کرلیا گیا۔ چھاپے کے دوران چوتھی ملزمہ خاتون موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے