منگل , 25 فروری 2020

بالی ووڈ کو خیرباد کہنے والی سابق اداکارہ زائرہ وسیم مقبوضہ کشمیر ميں بھارتی مظالم کے خلاف بول پڑیں

بالی ووڈ کو خیرباد کہنے والی سابق اداکارہ زائرہ وسیم مقبوضہ کشمیر ميں بھارتی مظالم کے خلاف بول پڑیں۔ کشمیر سے تعلق رکھنے والی زائرہ نے انسٹا گرام پر کئی سوالات اٹھا ديےاپنے انسٹا گرام پر ایک پوسٹ شئیر کرتے ہوئے زائرہ وسیم کا کہنا تھا کہ ہماری آزادی پر قدغن لگانا بے حد آسان ہے، ہم روز دنیا کو اپنے وجود کی یاد دلانے کيلئے لڑتےہيں
۔ ہماری زندگی اور خواہشات کو قابو کیا جا رہا ہے۔بھارتی میڈیا کشمیر کی اصل صورتحال نہیں دکھارہا۔اداکارہ نے مزید لکھا کہ اُمید اور مایوسی کے درمیان کشمیر ابھی تک مشکلات کا شکار ہے، اس بڑھتی ہوئی مایوسی اور غم کے باعث آج ہمارے پاس سکون نام کی چیز نہیں، کشمیر میں ہم ان لوگوں کے زیرِ اثر ہیں جو ہماری خواہشات کو سلب کرتے اور ہم پر آسانی سے پابندیاں لگاتے ہیں۔اداکارہ نے کہا کہ ہمیں ایسی دنیا میں رہنے کی کیا ضرورت ہے جہاں ہماری زندگی اور خواہشوں کو قابو کیا جاتا ہے؟ ہمیں جھکا کر ہم پر حکمرانی کی جاتی ہے، کیا ہماری آوازوں کو بے آواز کرنا اتنا ہی آسان ہے؟زائرہ وسيم نے اپني انسٹاگرام پوسٹ ميں جہاں اور بہت سے سخت سوالات اٹھائے وہيں اپنے مداحوں کو مشورہ دیا کہ میڈیا کشمير سے متعلق آپ کے سامنے جو تصویر پیش کر رہا ہے اس پر یقین نہ کریں۔ غلط حقائق اور غلط تصاویر پر قطعی یقین نہ کریں۔سابق اداکارہ نے مزید لکھا کہ ہم میں سے کوئی نہیں جانتا کہ ہماری آوازیں کب تک کے لیے خاموش کر دی گئی ہیں۔ واضح رہے کہ زائرہ وسیم نے فلم دنگل سے شہرت پائی جس میں انہوں نے عامرخان کی بیٹی کا کردار ادا کیا تھا۔ 18 سالہ اسٹار نے سال 2019 میں فلم انڈسٹری چھوڑنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ اس فیلڈ میں کام کرنے کی وجہ سے ان کا ایمان خطرے میں پڑرہا ہے اور وہ بہت خاموشی سے اپنے مذہب سے دور ہوتی جارہی ہیں لہٰذا انہوں نے فلم انڈسٹری کو خیرباد کہن کا فیصلہ کرلیا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے