منگل , 25 فروری 2020

جانتے ہیں نواز شریف ترک صدر طیب اردگان سے کیا ’’ ٹپس ‘‘ لیا کرتے تھے ، حیران کن انکشاف

جانتے ہیں نواز شریف ترک صدر طیب اردگان سے کیا ’’ ٹپس ‘‘ لیا کرتے تھے ، حیران کن انکشاف۔۔۔ ایک نجی ٹی وی چینل سے گفتگو کرتے ہوئے سینئر صحافی ڈاکٹر شاہد مسعود نے انکشاف کیا ہے کہ سابق وزیراعظم نواز شریف ترک صدر سے ٹیپس لیا کرتے تھے نواز شریف ان سے پوچھا کرتے تھے کہ انھوں نے ترکی کے اندر بغاوت پر قابو کس طرح سے پایا، اس حوالہ سے وہ طیب اردوان سے ہی مشورہ لیتے تھے۔ انھوں نے کہا کہ طیب اردوان انکے بہت زیادہ قریب تھے اور ترکی کے ساتھ پنجاب کے بہت زیادہ معاہدے چل رہے تھے۔
ان میں صفائی کرنے والی ترکی کمپنی بھی شامل تھی اور اسکے علاوہ ترکی کے اشتراک سے پنجاب میں تعلیمی ادارے بھی کام کر رہے تھے۔ واضع رہے کہ 1999میں سابق وزیراعظم نواز شریف کے دور حکومت میں انھیں فوج کی جانب سے مخالفت کا سامنا کرنا پڑا تھا اور ملک میں مارشل لا نافز کردیا گیا تھا۔ اس وقت پاکستانی فوج کے سربراہ جنرل پرویز مشرف تھے اور انھوں نے نواز شریف کی حکومت کو برطرف کردیا تھا۔ نواز شریف کو اسکے بعد جلا وطنی بھی کاٹنا پڑی تھی اور وہ سعودی عرب چلے گئے تھے۔ انکے قریبی ساتھیوں کی جانب سے کہا جاتا رہا ہے کہ انھیں جب حکومت دوبارہ ملی تو انھیں اس بات ڈر رہتا تھا کہ کوئی انکے خلاف بغاوت نہ کردے اور اگر ہو جائے تو اس پر قابو کیسے کیا جائے۔ اس حوالے سے ڈاکٹر شاہد مسعود کا کہنا ہے کہ نواز شریف بغاوت پر قابو پانے کے لیے اپنی تمام تر ٹپس طیب اردوان سے لیتے تھے اور ان سے پوچھا کرتے تھے کہ جب ترکی میں بغاوت ہوئی تو اس پر کیسے قابو پایا گیا تھا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے